’ بابر اعظم کو کپتان نہ بناؤ کیونکہ ۔۔۔ ‘ راشد لطیف نے مخالفت کردی

57

کرکٹ سے جڑی ہر خبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لائیک کریں شکریہ
پاکستان کرکٹ ٹیم سابق کپتان اور معروف وکٹ کیپر بیٹسمین راشد لطیف کا کہنا ہے کہ جب تک سسٹم ٹھیک نہیں ہوگا میرے سلیکٹر بننے سے بھی کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ کراچی میں میڈیا سے گفتگو میں سابق کپتان راشد لطیف کا کہنا تھا کہ


سابق کپتان راشد لطیف کا کہنا تھا کہ کرکٹرز کو احتیاط کرنا چاہیے، امام الحق کا ذاتی مسئلہ ہے لہذا اس معاملے پر ابھی کوئی بات نہیں کر سکتا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا سسٹم ٹھیک ہونا چاہیے، کوئی آئے یا جائے فرق نہیں پڑتا، جب تک سسٹم ٹھیک نہیں ہوگا میرے سلیکٹر بننے سے بھی کوئی فرق نہیں پڑے گا۔راشد لطیف نے کہا کہ ملک میں کلب کرکٹ ختم ہوچکی ہے، کلب کرکٹ ہوگی تو اچھے کرکٹرز سامنے آئیں گے، کسی کا کیریئر تباہ کرنا آسان ہوتا ہے، قومی کرکٹ ٹیم کا کوچ بھی پاکستانی ہونا چاہیے جب کہ تینوں فارمیٹ کا ایک ہی کپتان ہونا چاہیے، سرفراز احمد کے علاوہ کوئی کپتان دکھائی نہیں دیتا جب کہ بابراعظم کو ابھی کپتان بنانا جلد بازی ہوگی۔ واضح رہے کہ شعیب اختر نے ٹیسٹ، ٹی ٹوینٹی اور ون ڈے کی کپتانی سرفراز سے واپس لینے کی تجویز دی تھی اور حارث سہیل کو کپتان بنانے کا مطالبہ کیا تھا۔